آسمانی فیصلہ

یہ تحریر 606 مرتبہ دیکھی گئی

تیرے  چہرے  کی  تحریر

میرے  جذبوں  کی تفسیر 

تیرے  جسم  کی یہ  قندیل 

میرے  تخیّل   کی  تشکیل 

تیری  ہنسی   ،   مِرے  غم  کا  مداوا 

تیری  خامشی  ،  میری  دلیل 

حسن  تِرے  کا  اِحاطہ  کرنا  ،  میرے  فن  کا  عجز 

مَیں  کہ  پریشاں  ،  بِکھرا  ہُوا  ،  تُو  میری  تنظیم

تُو  میری  ذات  کا  باقی  حِصّہ  ،  تُو  میری  تکمیل

تُو  ہی بتا !

تُو  ہی بتا   ،  کیا   سچ  نہیں  کہتے  ،  اتنے  سارے  قرائن  ؟

عرشی  مُہندِس  نے  کِیا  تُجھ  کو  میرے  لیے  ڈیزائن

جانے  کیوں پِھر   ساتھ  ہی  اُس  نے  لِکھ  دی  یہ  تقدیر

ایک  کے  ہاتھ  پہ  دوسرے  کی

کوئی  نہیں  ہے  لکیر   !

کوئی  نہیں  ہے  لکیر   !!