قصیدہ بہار

یہ تحریر 86 مرتبہ دیکھی گئی

سرخیاں، پاؤڈر، حنا، کاجل
رنگ تو تب لبوں پہ آئے گا
جب رگوں میں تپش کی حد بندی
ریشے ریشے کو شعلہ در شعلہ
ناگ کر دے گی اور زہریلی
خوشبوؤں کے حصار میں لے کر
آتشیں پتیوں کا ریشمی لمس
اپنی دہشت میں گم ستارے کو
بوسہ بوسہ ہلاک کر دے گا!