عرفان صدیقی* کے نام ایک خط

یہ تحریر 157 مرتبہ دیکھی گئی

یا اخی !
جس دن تم ہمیں دشت میں چھوڑ کر چل دیے تھے ،
اسی دن شام کے اخبار میں
تمہاری گم شدگی کی خبر شائع ہوئی تھی ،
اسی روز طرف گم شدگاں جو خط لکھے گئے تھے ،
جن کے لفافوں پر پتے تحریر نہیں تھے ،
ان میں ایک خط میرا بھی تھا !
یا اخی !
اس روز میں نے تمہاری یاد میں
لوح زمیں پر ایک نظم لکھی تھی ،
اور اسی روز لوح زماں پر تمہارا نام لکھا گیا تھا !
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
*ہندوستان کے ممتاز و مرحوم شاعر
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔